وزیراعظم ہاؤس کا نام تبدیل کر دیا گیا

وزیراعظم ہاؤس کا نام تبدیل کر دیا گیا

وزیراعظم ہاؤس کا نام تبدیل کر دیا گیا ہے۔وزیراعظم ہاؤس کا نیا نام ‘ اسٹیٹ کمپلیکس’ رکھ دیا گیا ہے۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ وزیراعظم ہاؤس کے نئے نام کا استعمال بھی شروع کر دیا گیا ہے۔بجلی کے بلوں پر نیا نام درج کر دیا گیا ہے۔اس سے قبل وفاقی حکومت نے سابق وزیراعظم ہاؤس کا نام ’’دارالحکمہ‘‘ رکھنے کا فیصلہ کیا تھا۔واضح رہے پاکستان تحریک انصاف نے اقتدار میں آنے سے قبل ہی گورنر ہاؤسز کو عوام کے لیے کھولنے اور وزیراعظم ہاؤس کو اعلیٰ معیار کی یونیورسٹی بنانے کا اعلان کیا تھا۔ اقتدار میں آتے ہی پاکستان تحریک انصاف نےگورنر ہاؤسز کے دروازے عام عوام کے لیے کھول دئے اور عوام سے کیا اپنا وعدہ پورا کیا۔

وفاقی وزارت تعلیم نے وزیر اعظم ہاؤس کو ریسرچ یونیورسٹی بنانے کا عمل مکمل کر لیا ہے۔جبکہ اس یونیورسٹی کا نام ”اسلام آباد نیشنل یونیورسٹی” تجویز کیا گیا تھا۔منصوبہ بندی کے تحت ایوان وزیر اعظم کی 30 ایکڑ اراضی پر ریسرچ یونیورسٹی قائم کی جائے گی جس میں مختلف مضامین میں تحقیقات کے علاوہ حکومت سازی ، مختلف اداروں کو اعلیٰ معیار کی ریسرچ کے مطابق معاونت فراہم کی جا ئے گی۔ وزیر اعظم ہاؤس سے پولو گراؤنڈ، گھوڑوں کے لیے بنائے گئے اصطبل اور ایک تفریحی پہاڑی کو ختم کر کے حاصل ہونے والی زمین کو دوسرے فیز میں 30 ایکڑ رقبہ پر یونیورسٹی کی طرز پر بنا یا جا ئے گا۔ذرائع نے بتایا کہ وزیر اعظم ہاؤس کو یونیورسٹی کا درجہ دینے کے لیے ابتدائی طور پر ایک ریسرچ انسٹی ٹیوٹ بنایا جا ئے گا۔ یونیورسٹی کی نئی عمارت کی تعمیر کے لیے دوسرے فیز میں وزیر اعظم ہاؤس کا 30 ایکڑ رقبہ استعمال کے قابل بنایا جائے گا۔ وزیراعظم ہاؤس میں قائم کی جانے والی یونیورسٹی ملک کی اعلٰی معیار کی ریسرچ یونیورسٹی ہو گی۔ اس حوالے سے میڈیا نمائندے سے بات کرتے ہوئے چئیرمین ہا ئر ایجوکیشن کمیشن پاکستان ڈاکٹر طارق بنوری کا کہنا تھا کہ وزیراعظم ہاؤس میں قائم کی جانے والی یو نیورسٹی کو پہلے فیز میں ریسرچ انسٹی ٹیوٹ بنایا جائے گا۔ جس کے بعد دوسرے فیز میں گریجویٹ کی سطح پر تعلیم، جس میں ایم فل اور پی ایچ ڈیز ہوں، دی جائے گی اور انڈرگر یجوایٹ کی تعلیم نہیں ہو گی۔

Share